کامیابی کا محبت اور غصے کے جذبات کے ساتھ تعلق

کامیابی کا محبت اور غصے کے جذبات کے ساتھ تعلق
کامیابی کا محبت اور غصے کے جذبات کے ساتھ تعلق
انسان میں جذبات 27 قسم کے ہوتے ہیں۔ ان ستائیس جذبات میں دو بہت اہم ہیں۔ غصہ اور محبت۔ ایک شخص میں اگر 26 جذبات ہوں، لیکن غصہ نہ ہوتو اس کی شخصیت متاثر ہونا شروع ہوجائے گی۔جذبات زندگی کا ایندھن ہوتے ہیں۔ جو آدمی جذباتی طور پر ذہین نہیں، وہ ترقی نہیں کرسکتا۔ وہ خطرے میں ہے اوراس سے بھی زیادہ خطرے میں وہ ہے جو جذبات کو دباتا ہے۔ ہمیں یہی سکھایا جاتا ہے کہ اپنے جذبات کو کنٹرول کریں۔ یہ بات غلط ہے۔ صحیح یہ ہے کہ جذبات کو دبایا نہ جائے، بلکہ انھیں منظم  کیا جائے۔ جذبات کو دبانے سے نقصان ہوتا ہے۔ مثا ل کے طور پر، اگر کسی کو دفتر میں ڈانٹ پڑنے پر غصہ آ گیا، مگر اُس نے اپنے غصے کو دبا لیا تو وہ غصہ کہیں اور نکلے گا۔ وہ یہ غصہ اپنے گھر والوں پر نکالے گا یا صحت پرنکال کر اسے خراب کرے گا۔



نپولین ہل نے اٹھائیس سال تحقیق کے بعد ایک کتاب لکھی، Think and Grow Rich۔ اس کتاب میں وہ کہتا ہے کہ ’’میں نے دو ہزار سال کی سوانح عمریاں پڑھ کر دیکھی ہیں۔ جتنے بھی کامیاب لوگ ہیں، ان کی کامیابی میں محبت کا نہایت اہم کردار ہے۔‘‘ محبت واحد جذبہ ہے جو انسان کو انسانیت کی معراج پر لے جاتا ہے۔ یہ واحد جذبہ ہے جو انسان کو فوکس کرنا سکھاتا ہے۔ یہ اتنا طاقت وَر جذبہ ہے کہ جس کی وجہ سے لوگ پھانسی کو قبول کرلیتے ہیں۔ دنیا میں بڑے بادشاہ اسی جذبے کی وجہ سے فقیر ہوئے۔ امیر لوگوں نے اپنی جاگیر یں اس کے پیچھے لٹا د یں۔ کسی نے آئن سٹائن سے پوچھا کہ آپ نے ’’نظریہ اضافیت‘‘ پیش کیا ہے۔ اسے ذرا آسان لفظوں میں سمجھا دیں۔ اس نے جوا ب دیا کہ انسان اگر کسی خوبصورت لڑکی سے محبت کرتاہے اور وہ سارا دن اس کے پاس بیٹھا رہے تو شام کو پوچھا جائے کہ کتنا وقت گزرا ہے تو وہ جواب دے گا کہ ابھی تو لمحہ گزراہے، لیکن اس کو گرم توے پر بٹھا دیا جائے توایک سیکنڈ کے بعد کہے گا کہ ایک صدی گزر گئی۔



بہت کم گانے ایسے ملیں گے جس میں محبت،پیار اور عشق کے الفاظ نہ ہوں۔ وہ گانا گاناہی نہیں ہے جس میں محبت بھرے الفاظ نہ ہوں، جس میں دکھ درد نہ ہو، جس میں لگن اور کڑھن نہ ہو، جس میں جنون نہ ہو۔ کچھ نہ کچھ تو ایسا ہے کہ جس کی وجہ سے ساری شاعری یہاں سے شروع ہو تی ہے اور یہیں ختم ہوتی ہے۔ زندگی کے ابتدائی بارہ تیرہ سال کی عمر سے سے اگلے بارہ تیرہ سال تک کی عمر یہ جذبات اپنی انتہا پر ہوتے ہیں۔ محبت میں انسان اپنا وقت دیتا ہے، اہمیت دیتا ہے اور قربانی کیلئے تیار رہتا ہے جس شخص میں یہ تین چیزیں پائی جا ئیں تو سمجھ لیجیے کہ اسے کسی سے محبت ہے۔ یہی محبت اگر صنف مخالف ہوجائے تو عموماً جوانی کو برباد کرڈالتی ہے اور یہی محبت اگر کسی عظیم مقصد سے ہوجائے تو زندگی سنور جاتی ہے۔



Post a Comment

0 Comments