جوان رہنا چاہتے ہیں تو یہ پانچ عادتیں اپنا ئیں

جوان رہنا چاہتے ہیں تو یہ پانچ عادتیں اپنا ئیں
جوان رہنا چاہتے ہیں تو یہ پانچ عادتیں اپنا ئیں
ہر انسان یہ چاہتا ہےوہ گزرتے وقت کے ساتھ جوان نظر آئے لیکن قدرت کا بنایا ہوا قانون ہے ہر انسان نے ایک نہ ایک دن بوڑھا ہونا ہے اور موت کا ذائقہ چکھنا ہے ۔کچھ لوگ بڑھتی عمر کے اثرات کم کرنے کے لیے مختلف کاسمیٹکس کا سہارا لیتے ہیں اب تو مارکیٹ میں بہت سی ادویات بھی متعارف کروا دی گئی ہیں جو آپ کو  جوان رکھتی ہیں لیکن ان ادویات کے انسان پر بہت سے منفی اثرات بھی ہوتے ہیں اس لیے ان کا استعمال کسی مستند ڈاکٹر کے مشورے سے کریں ۔ آج میں آپ لوگوں کے ساتھ روز مرہ زندگی  کی چند ایسی عادات شئیر کروں گا جن پر عمل کر آ پ خود کو جوان رکھ سکتے ہیں۔

 جسمانی سرگرمیوں میں حصہ لیں
ہر انسان اپنی زندگی میں بہت مصروف ہوتا ہے اور اس مصروفیت میں زیادہ تر دفتر سے گھر اور گھر سے دفتر معمول ہوتا ہے جو عمر کی رفتار کو  مزید تیز کر دیتا ہے۔ وہ لوگ جو دفتری کام کرتے ہیں انہیں چاہیے کہ وہ اپنی زندگی کے معمولات میں بنیادی تبدیلیاں لائیں اور ایسی سرگرمیوں میں حصہ لیں جہاں انہیں حرکت کرنی پڑے۔ تھوڑی بہت ورزش واکنگ جاگنگ وغیرہ۔لیکن یہ بھی ذہن نشین رہے کہ ورزش کو حد سے زیادہ کرنا بھی نقصان دہ ہے۔ اگر بھاری ورزش کرنی ہو تو کھانے کا خصوصی خیال رکھیں۔
 نیند پوری کرنا
مصروف دن گزارے کے بعد ہمارے جسم میں جو بھی توڑ پھوڑ کا عمل ہوتا ہے۔ اس کی مرمت کا کام دوران نیند ہوتا ہے۔ اس لیے جو بھی لوگ پوری نیند لیتے ہیں وہ زیادہ دیر تک جوان رہتے ہیں۔ پوری نیند کا کوئی معیار نہیں ہے۔ ہر جسم کی اپنی ضرورت ہوتی ہے۔ ماہرین صحت نیند کے لیے اوسط وقت سات سے آٹھ گھنٹے قرار دیتے ہیں۔
 پانی کا استعمال
انسانی جسم میں ساٹھ فیصد سے زیادہ پانی کی مقدار پائی جاتی ہے ۔اگر کوئی پانی سے بھرپورانسانی  جسم اور پانی کی کمی کا شکار جسم کا فرق سمجھنا چاہتا ہو تو کشمش اور انگور کی مثال کو  سامنے رکھ لے ۔ پانی سے بھرپورجسم انگور کی طرح تروتازہ ہوتا ہے جبکہ پانی کی کمی کا شکار جسم کشمکش کی طرح جھریوں والا ہوتا ہے۔ پانی کی کمی عمر کی رفتار بڑھا دیتی ہے اور انسان جلدی بوڑھا لگنا شروع ہو جاتا ہے۔اس کے علاوہ ایسے پھل اور سبزیاں بھی مفید ہیں جن میں پانی کی مقدار وافر ہوتی ہے۔ چائے  اور کافی وغیرہ مشروب ہونے کے باوجود جسم کے خلیوں میں پانی کی کمی پیدا کرتے ہیں اس لیے ان سے بچنا چاہیے۔دن بھر میں پانی کی ضرورت کو پورا رکھیں ایک اوسط انسانی جسم کو دن بھر میں آٹھ سے دس گلاس پانی پینا چاہیے ۔
آلودگی سےخود کو بچائیں
ہمیں اپنے روزمرہ کے کام کاج کے سلسے میں باہر نکلنا پڑتا ہے جسکی وجہ سے انسان کو سانس کے ذریعے سے بہت سی بیماریوں کا سامنا کرنا پڑتا  ہے۔ سانس ہی کی کئی بیماریاں ہیں جن کی وجہ سے بڑھتی عمر کا جسم اور توانائی پر برا اثر پڑتا ہے۔ ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ شہر کا آلودہ ماحول انسانی صحت کو تباہ کر کے عمر بڑھنے کی رفتار کو تیز کر دیتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ان اثرات کے خاتمے کے لیے ہمیں چاہیے کے فطری ماحول جیسے جنگل پہاڑ جھیلیں ساحل سمندر وغیرہ کی طرف سیر کے لیے  جانا چاہے ، ٹریکنگ ، سائیکلنگ اور ہائکنگ،  وغیرہ کرنی چاہیے۔اگر آپ کو آلودہ ماحول میں جانا پڑے تو ماسک کا استعمال کریں اور واپس آنے پر اپنی جلد کو کسی اچھے فیس واش سے دھو لیں۔


تازہ  سبزیاںاور فروٹ اپنی خوراک میں شامل کریں
انسان جو کھاتا ہے اس کا اثر انسانی جسم پر بہت زیادہ ہوتا ہے۔ ماہرین صحت کے نزدیک سبز پتوں والی سبزیاں قدرتی طور پر غذائی توانائی کا بڑا خزانہ ہیں۔ وہ لوگ جو اپنی خوراک میں سبز پتوں والی سبزیوں کو شامل رکھتے ہیں وہ نہ صرف زیادہ عرصہ زندہ رہتے ہیں بلکہ زیادہ عرصہ جوان بھی رہتے ہیں اور اپنی عمر سے کم نظر آتے ہیں۔


Post a Comment

0 Comments